Jalwa jamal e yaar ka

جلوہ جمال ِیار کا خوشبو میں ڈھل گیا

خوشبو ہوا کے پاس تھی پر ہو بہو نہیں

ثمینہ گُل

Comments are closed.